ساہیوال اندرون شہر جوس کارنر عیا شی کا گڑھ بن گیا شریف شہر ی اور عیا ش مکڑے لوٹنے لگے

اندرون شہر جوس کارنر عیا شی کا گڑھ بن گیا شریف شہر ی اور عیا ش مکڑے لوٹنے لگے، انار فی گلا س 250کیلا فی گلا س 120گندے گلے سڑے پھلو ں کے جو س کی فروخت دھڑلے سے جاری، کیبن میں جوڑو ں کی رنگ رلیا ں، کمشنر ساہیوال ، ڈی سی ساہیوال فوڈ اتھارٹی، ساہیوال ڈی پی او ساہیوال سے فوری نوٹس کا مطالبہ۔

ساہیوال (رانا صدام حسین سے ) اندرون شہر جوس کارنر عیا شی کا گڑھ بن گیا شریف شہر ی اور عیا ش مکڑے لوٹنے لگے، انار فی گلا س 250کیلا فی گلا س 120گندے گلے سڑے پھلو ں کے جو س کی فروخت دھڑلے سے جاری، کیبن میں جوڑو ں کی رنگ رلیا ں، کمشنر ساہیوال ، ڈی سی ساہیوال فوڈ اتھارٹی، ساہیوال ڈی پی او ساہیوال سے فوری نوٹس کا مطالبہ۔
تفصیل کے مطابق ساہیوال ہائی سٹریٹ ملک شیک اینڈ جو س کارنر عیا شی کا گڑھ بن چکا ہے عیا ش مکڑے اپنی رنگین تتلیو ں کے ساتھ یہا ں جو س کارنر بند کیبن میں بیٹھ کر رنگ رنگیا ں مناتے ہیں مگر اس کے ساتھ ساتھ کچھ شریف فیملیا ں بھی یہا ں آکر پھنس جاتی ہیں جن سے اپنی مرضی کے ریٹ اور بد تمیزی کی جاتی ہے ریٹ میں انا ر فی گلا س 250کیلا فی گلا س 120روپے لے لیا جاتا ہے اگر کوئی گاہک اوورچارجنگ کی شکایت کرے تو اسے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی جاتی ہیں بتایا جاتا ہے کہ شریف لڑکیو ں خصوصاََ طالب علم لڑکیو ں کو یہا ں پر بلیک میل کیاجاتا ہے۔اور یہ بھی بتایا جاتا ہے کہ اس جو س کارنر پر گندے اور گلے سڑے پھلو ں کے جوس دھڑلے سے فروخت کئے جاتے ہیں۔ ساہیوال کے شہر ی محمد ظفر نے بتایا کہ میں اپنی فیملی کے ساتھ یہا ں جو س پینے آیاتو مجھ سے اوور چارجنگ کی گئی اور میرے بحث کر نے پر مجھے سنگین نتائج کی دھمکیا ں دی گئیں اور کہا اگر تم چپ چاپ یہاں سے نہ گئے تو تمہیں سنگین مقدمات میں بند کرادیں گے اس بارے میں جب جو س کارنر کے ملا زمین سے موقف جاننے کی کوشش کی گئی تو انہو ں نے کہا کہ آپ کمشنر ساہیوال، ڈی سی ساہیوال اور جس مرضی کو ہماری شکا یت کر لیں ہم اسی طر ح اوورچارجنگ جاری رکھیں گے ہمارا کوئی کچھ نہیں بگارڈ سکتا ساہیوال کے شہر ی محمد ظفر اور ساہیوال کے عوامی و سماجی حلقو ں نے کمشنر ساہیوال، ڈی سی ساہیوال فوڈ اتھارٹی ساہیوال ، محکمہ ہیلتھ، ڈی پی او ساہیوال اور سمیت دیگر اربا ب اختیار سے فوری نوٹس کا مطالبہ کیا ہے۔

Be the first to comment on "ساہیوال اندرون شہر جوس کارنر عیا شی کا گڑھ بن گیا شریف شہر ی اور عیا ش مکڑے لوٹنے لگے"

Leave a comment

Your email address will not be published.


*